Parvez Alam

یکاترن برگ: صدر زرداری نے بھارتی وزیراعظم سے ملاقات کے بعد توقع ظاہر کی ہے کہ اب پاک بھارت تعلقات نئے دور میں داخل ہوں گے۔ بھارتی سیکریٹری خارجہ نے کہاہے کہ زرداری من موہن کی ملاقات کا مطلب مذاکرات کی بحالی نہیں۔ صدر زرداری اور من موہن کی آئندہ ملاقات شرم الشیخ میں ہوگی۔ شنگھائی تعاون تنظیم کا دو روزہ اجلاس روس کے شہر یکاترنبرگ میں جاری ہے۔اجلاس میں وسطی ایشیائی ممالک کے رہنما شریک ہیں۔ اجلاس کے موقع پر صدر آصف زرداری کی بھارتی وزیراعظم من موہن سنگھ سے تاریخی ملاقات ہوئی،جس میں دونوں رہنماوٴں نے تعلقات کی بحالی کا عزم کیا۔ممبئی دہشت گردی کے بعد دونوں ممالک کے تعلقات میں جو تعطل آیا تھا اس ملاقات سے نہ صرف وہ جمود ٹوٹا ہے بلکہ ایک بار پھر یہ امید پیدا ہوئی ہے کہ دوطرفہ جامع مزاکرات کا عمل بھی بحال ہوجائیگا، ملاقات میں فیصلہ کیا گیا کہ پاکستان اور بھارت کے سیکریٹری خارجہ دونوں ممالک کے درمیان بتدریج تعلقات مستحکم کرنے کیلئے جلد ملاقات کریں گے۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے آج نیوز کو بتایا کہ سیکریٹری خارجہ کے درمیان مذاکرات پر جائزے کے لیے صدرزرداری اور من موہن سنگھ جولائی میں مصر کے شہر شرم الشیخ میں ملاقات کریں گے۔ روس میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ مذاکرات کی بحالی دونوں ممالک کے مفاد میں ہے۔دوسری جانب بھارتی سیکریٹری خارجہ شیو شنکر مینن نے کہا ہے کہ پاک بھارت رہنماوٴں کی ملاقات کا مطلب مذاکرات کی بحالی نہیں ہے